سیاست کے ذریعے کثیر الثقافتی خاندانوں کے انسانی حقوق کی طرف توجہ مرکوز

روزنامہ سیؤل کی جانب سے غیر ملکیوں کے انسانی حقوق کو مد نذر رکھتے ہوئے “غیر ملکی شہریوں کو سیاست کے ذریعے قریب کرنے کی کوشش درکار ہے”

 رواں سال 8 اکتوبر کو شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق، کوریا میں تقریبن 24 لاکھ 20 ہزار غیر ملکی شہری بستے ہیں، اور اگر یہ  تمام 24 لاکھ ایک مخصوص علاقے میں رہائش پزیر ہوں اور انھیں ووٹنگ کا حق بھی مہیا کیا جائے تو پارلیمنٹ کے کم از کم نو سے انیس ممبران منتخب ہوسکتے ہیں۔ ووٹ کا اختیار نہ ہونے، کچھ مخصوص حقوق اور  سماجی اثرورسوخ نہ ہونے کی وجہ سے اکثر سیاستداں غیر ملکیوں کے حقوق کی جانب توجہ نہیں دیتے

تارکین وطن کے حقوق سے متعلقہ اور دوسرے تمام قانونی بلوں کو ترجیحی بنیادوں سے ہٹایا جارہا ہے اور یہ بھی حقیقت ہے کہ حالیہ برسوں میں غیر ملکیوں کے انسانی حقوق کی خلاف ورزی اور جنسی تفریق کی جانب قانون سازی کو فروغ دیا جارہا ہے۔ اسی وجہ سے قومی اسمبلی اور مقامی کونسلوں کو غیر ملکی شہریوں کی نمائندگی کے لئے مزید لوگوں کی ضرورت ہے۔

لی جیسمین کے ممبر آف پارلیمنٹ منتخب ہونے کے بعد یہ سلسلہ تھم چکا ہے. صرف پارلیمنٹ ہی نہیں بلکہ بلدیاتی لیول پر بھی غیر ملکی نمائندگان کی بڑی تعداد میں تقرری درکار ہے. سیاست کے ذریعے غیر ملکی شہریوں کو معاشرے کا مؤثر رکن بنانا چاہئے

(Base Article): https://www.seoul.co.kr/news/newsView.php?id=20191009008004

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.